Bara Dushman Bana Phirta Hai Layric And Urdu Text

Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai Layric

Pata Kia Pochta Hai Woh Kitabon Main Milon Ga Main
Kiay Maan Say Hain Jo Main Ne Keh Waadon Main Milon Ga Main
Main Aany Wala Kal Hon Woh Mujhy Kiyoun Aaj Mary Ga
Yeh Os Ka Wehm Ho Ga Keh Woh Aisay Khawab Maray Ga
Tumhara Khoon Hon Na Es Liay Acha Lara Hon Main
Bata Aaya Dushman Ko Keh Os Say To Bara Hon Main
Main Aisi Qaoom Say Hon Jis Key Woh Bachon Say Darta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Woh Jab Aaty Hoay Mujh Ko Galay Tum Nay Lagaya Tha
Aman Allah Kaha Mujh Ko Mera Beta Bulaya Tha
Khuda Kay Aman Ki Rah Main Kahan Say Aa Gia Tha Woh
Jahan Tum Choomti Thi Maan Wahan Tak Aa Gia Tha Woh
Main Aisi Qaoom Say Hon Jis Kay Woh Bachon Say Darta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Mujhy Jana Para Hai Per Mera Bhai Karay Ga Abb
Main Jitna Na Parha Woh Sub Mera Bhai Parhay Ga Abb
Abhi BABA Bhi Baqi Hai Kahan Tak Ja Sako Gay Tum
Abhi Wada Raha Tum Say Yahan Na Aa Sako Gay Tum
Main Aisi Qaoom Say Hon Jis Kay Woh Bachon Say Darta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Bara Dushman Bana Phirta Hai Jo Bachon Say Larta Hai
Welcome Back To School……!
پتہ کیا پوچھتا ہے وہ، کتابوں میں ملوں گا میں !
کیے ماں سے ہیں جو میں نے کہ وعدوں میں ملوں گا میں!
میں آنے والا کل ہوں وہ مجھے کیوں آج ماریگا ،

یہ اسکا وہم ہوگا کہ وہ ایسے خواب ماریگا !
تمہارا خون ہوں نہ اس لیے اچھا لڑا ہوں میں
بتا آیا ہوں دشمن کو کہ اس سے تو بڑا ہوں میں!
میں ایسی قوم سے ہوں جس کے وہ بچوں سے ڈرتا ہے،
بڑا دشمن بنا پھرتا ہے جو بچوں سے لڑتا ہے!
وہ جب آتے ہوئے مجھ کو گلے تم نے لگایا تھا،
امان اللہ کہا مجھ کو میرا بیٹا بلایا تھا،
خدا کے امن کی راہ میں کہاں سے آگیا تھا وہ،
جہاں تم چومتی تھیں ماں وہاں تک آگیا تھا وہ!
میں ایسی قوم سے ہوں جس کے وہ بچوں سے ڈرتا ہے،
بڑا دشمن بنا پھرتا ہے جو بچوں سے لڑتا ہے!
مجھے جانا پڑا ہے پر میرا بھائی کریگا اب ،
میں جتنا نہ پڑھا وہ سب میرا بھائی پڑھےگا اب،
ابھی بابا بھی باقی ہیں کہاں تک جا سکوگے تم،
ابھی وعدہ رہا تم سے یہاں تک نہ آ سکوگے تم!
میں ایسی قوم سے ہوں جس کے وہ بچوں سے ڈرتا ہے،
بڑا دشمن بنا پھرتا ہے جو بچوں سے لڑتا ہے!
wellcome back to school!
Bara Dushman Bana Phirta Hai Layric



One thought on “Bara Dushman Bana Phirta Hai Layric And Urdu Text

Leave a Reply